29 November 2022
  • 12:01 pm ECP rejects Imran Khan’s appeal in conduct violation case
  • 12:01 pm اعظم سواتی کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع
  • 11:46 am Watch video: Elderly besties reunite after years, video leaves internet emotional
  • 11:46 am The Kashmir Files controversy: Nadav Lapid’s remark was ‘completely his personal opinion’, says filmmaker Sudipto Sen
  • 11:45 am Don’t agree with Nadav Lapid’s remarks on ‘The Kashmir Files’, says Israeli diplomat on IFFI row
Choose Language
 Edit Translation
My-Ads
Spread the News

شمالی کوریا کے سرکاری ٹی وی کی سب سے مقبول ومعروف میزبان ری چون ہی گزشتہ روز صدر کم جونگ ان کی جانب سے اپنے لیے عالیشان رہائشگاہ کے اعلان کے بعد سرکاری ذرائع ابلاغ میں موضوع گفتگو بن گئیں۔

خبررساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کے مطابق چمکدار روایتی کوریائی لباس کی وجہ سے ‘گلابی خاتون’ کا نام پانے والی ری چون ہی کئی دہائیوں سے اس پروفیشن میں ہیں اور اس دوران ملک میں جوہری ومیزائل تجربات سمیت ایک رہنما کی موت جیسی اہم اور بڑی خبریں پڑھ چکی ہیں۔

کم جونگ ان نےعالیشان رہائشگاہ کا اعلان کرتے ہوئے ری چون سے کہا کہ وہ حکمران ورکرز پارٹی کی آوازکے طور پرکام جاری رکھیں۔

کورین سینٹرل نیوزایجنسی کے مطابق کم جونگ ان کا کہناہے کہ ‘ ری چون نے جوانی کے بعد سے 50 سال سے زائد عرصہ تک پارٹی کے لیے بطورانقلابی اناؤنسرکام کیا،یہ پارٹی کا خلوص ہے کہ وہ ان جیسے قومی اثاثوں کی خاطرسب کچھ کرے گی’۔

انہوں نے امید ظاہر کی کہ ری چون ہی پارٹی کے مناسب ترین ترجمان کے طور پر ہمیشہ کی طرح چاق و چوبند طریقے سے کام جاری رکھیں گی ۔

کے سی این اے کی رپورٹ کے مطابق کم جونگ ان نے دارالحکومت پیانگ یانگ میں دریا کنارے نئے تعمیرشدہ رہائشی ضلع کا افتتاح کرنے کے بعد بدھ کو 79 سالہ ری چون سے ملاقات کی۔ یہاں ری چون ہی اور دیگرایسےافراد کو ہی مکانات دیے گئے ہیں جنہوں نے ریاست کے لیے نمایاں خدمات سرانجام دیں۔

ری چون ہی نے 1970 کی دہائی کے اوائل میں سرکاری ٹی وی میں شمولیت اختیارکی تھی جب ملک میں کم جونگ ان کے آنجہانی دادا اور ریاست کے بانی کم ایل سنگ کی حکومت تھی ، وہ بتدریج پروپیگنڈے سے چلنے والی خبروں کی نشریات پیش کرتی ہیں۔

کئی بار ایسا بھی ہوا کہ ان کا پرجوش اورمؤثراندازدیگرممالک میں ہنسی کا باعث بن گیا، سال 2011 میں تائیوان کے ایک ٹی وی اسٹیشن کو اس وقت معذرت کرنا پڑی تھی جب ان کے ایک اینکر نے ری چون ہی کے لب ولہجے کی نقالی کی جو انہوں نے کم کے والد کم جونگ ایل کی موت کا اعلان کرتے وقت استعمال کیا تھا۔

ری چون کو جہاں رہائشگاہ دی گئی یہ وہ جگہ ہے جہاں 1970 کی دہائی تک کم ایل سنگ کی سرکاری رہائشگاہ واقع تھی، شمالی کوریا اکثراہم سرکاری برسی کے موقع پر تعمیراتی منصوبوں کا افتتاح کرتا ہے اورجمعے کو کم ایل سنگ کی 110 ویں سالگرہ ہے۔

اس خبر پرماہرین کا کہنا ہے کہ کم جونگ ان ملک کی اشرافیہ کے ساتھ خصوصی برتاؤکررہے ہیں تاکہ ان کی وفاداری بڑھا سکیں۔ کیونکہ انہیں عالمی وبا، مشکل معاشی صورتحال اورامریکہ کے ساتھ جوہری سفارت کاری میں تعطل جیسی مشکلات کا سامنا ہے۔

والد کی موت کے بعد اقتدار سنبھالنےوالے 38 سالہ کم جونگ ان نے شمالی کوریا کی قیادت مکمل اختیار کے ساتھ کی تاہم انہیں خراب معیشت ، کرونا وائرس اور امریکی قیادت میں عائد کردہ پابندیوں کی وجہ سے اپنی حکومت کے مشکل ترین دورکا سامنا ہے۔

Abdul Gh Lone

RELATED ARTICLES