1 February 2023
  • 3:06 am Senate calls for implementation of NAP to curb terrorism
  • 3:04 am KP elections: ECP summons ‘important meeting’ today
  • 2:37 am MQM-P holds meeting to review by-elections preparations
  • 2:37 am MQM-P holds meeting to review by-elections preparations
  • 1:55 am Punjab police foil terror attack on Mianwali police station
Choose Language
 Edit Translation
My-Ads
Spread the News

لاہور میں پولیو کے ماحولیاتی نمونے ایک بار پھر مثبت آئے ہیں۔

پنجاب پولیو پروگرام کےمطابق لاہور سے5 مقامات پر ماحولیاتی نمونے لئے گئے۔ ملتان روڈ کے سیوریج سے لیا گیا پولیو کا ماحولیاتی نمونہ مثبت آیا۔

پنجاب پولیو پروگرام کی جانب سے بتایا گیا کہ ماحولیاتی نمونہ 10 ماہ کے بعد مثبت آیا، یہ ماحولیاتی نمونہ اپریل میں لیا گیا تھا اور اس کی رپورٹ اب آئی ہے۔

پولیو سے بچاؤ کےلیے والدین کو مشورہ دیا گیا ہے کہ بچوں کو بروقت حفاظتی ٹیکے لگوائیں اور پولیوسے بچاؤ کےقطرے پلائیں۔

پنجاب پولیو پروگرام نے یہ بھی کہا کہ پولیو سے بچاؤ کے ٹیکوں اور قطروں سے محروم بچے رسک پر ہوتے ہیں۔

گذشتہ ہفتےعالمی ادارےانڈپنڈنٹ مانیٹرنگ بورڈ نےپنجاب میں عثمان بزداراورخیبرپختونخوا میں محمود خان کی انسدادِ پوليومہم کی کاوشوں کو ناکافی قراردیا تھا۔

رپورٹ میں لاہور میں رواں برس جنوری اور مارچ کی انسداد پولیو مہم کوانتہائی غیر اطمینان بخش قرار دیا گیا جب کہ گزشتہ برس خیبرپختونخوا کی انسداد پولیو مہم بھی غیرتسلی بخش رہی۔

رپورٹ کےمطابق پاکستان میں چیف سیکرٹریز اور ڈپٹی کمشنرز کے بار بار تبادلوں کی وجہ سے انسداد پولیو مہمات شدید متاثر ہورہی ہیں۔

ملک میں پنجاب کے سب سے زیادہ متاثرہ اضلاع میں 100 فیصد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے میں ناکام رہے۔

رپورٹ میں انکشاف ہوا کہ پاکستان میں پیدائش کے وقت اب بھی بچوں کی بڑی تعداد پولیو سے بچاؤ کے قطروں سے محروم ہے۔

کراچی،کوئٹہ، لاہور اور پورے خیبرپختونخوا میں انسداد پولیو ٹیمیں بچوں تک پہنچ نہیں پارہی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق پنجاب حکومت نے صوبے میں بچوں کی بڑی تعداد پولیو سے بچاؤ کے قطروں سے محروم رہ جانے کا بھی اعتراف کیا ہے۔

Abdul Gh Lone

RELATED ARTICLES