24 February 2024
  • 6:16 am ‘How is this Naya Kashmir?’ Why end of term of panchayats worsens anxieties about Delhi rule
  • 1:06 am Zhalay Sarhad’s comments on marriage go viral
  • 12:48 am Horrific: Man shot, stabbed by his four friends
  • 12:47 am ‘Suits’ sets new streaming record in 2023
  • 12:37 am Three coordinated attacks thwarted in Balochistan’s Mach: Jan Achakzai
Choose Language
 Edit Translation
My-Ads
Spread the News

وفاقی کابینہ نے نئے آرڈیننس کی منظوری دے دی ، جس کے تحت اب وفاقی وزرا انتخابی مہم چلا سکیں گے۔

نئے آرڈیننس کے تحت ارکان پارلیمان بھی انتخابی مہم میں حصہ لے سکیں گے۔

نئے آرڈیننس کی منظوری کیلئے وفاقی کابینہ کی جانب سے الیکشن کمیشن کے کوڈ آف کنڈکٹ میں تبدیلی کی گئی، جس کے بعد اب انتخابات کی مہم میں وزرا اور اراکین اسمبلی سب حصہ لے سکیں گے۔

اس سے پہلے وزراء اور ارکان پارلیمنٹ کی الیکشن کمپین میں حصہ لینے پر پابندی تھی۔ حصہ لینے پر ارکان پارلیمنٹ کو الیکشن کمیشن کے شوکاز نوٹسز کا سامنا کرنا پڑتا تھا۔

قبل ازیں مختلف سیاسی جماعتوں نے الیکشن کمیشن کے اس ضابطہ اخلاق پر تحفظات کا اظہار کیا تھا۔ صدارتی آرڈیننس میں تبدیلی کے لئے وفاقی کابینہ نے نئے آرڈیننس کی منظوری دی۔

نئے آرڈیننس پر تنقید کرتے ہوئے پاکستان پیپلزپارٹی کی سینیٹر شیری رحمان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت کے پاس الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ضوابط میں تبدیلی کا اختیار نہیں ہے، انہوں نے کہا کہ الیکشن مہم میں وفاقی وزرا اور اراکین پارلیمنٹ کے حصہ لینے سے متعلق آرڈیننس غیر آئینی ہے۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے صدارتی آرڈیننس میں تبدیلی اپنے مفاد کیلئے کی ہے۔

Abdul Gh Lone

RELATED ARTICLES